Police ki zyadati se awwam me dehshat paida ki gayi , Magar Muslim ittehad ne sazish ko ukhad pheka- Abdul Hannan SDPI State President

پولیس کی زیادتی سے عوام میں دہشت پیدا کی گئی
مگر مسلم اتحاد نے سازش کو اکھاڑ پھینکا ۔عبد الحنان

سوشیل ڈیمو کریٹک پارٹی آف انڈیا کے ریاستی صدر جناب عبدالحنان صاحب نے پا پولر فرنٹ ضلعی صدر محمد محسن کی جنرل ہاسپٹل پہنچ کر عیادت کی اور انکی اس قربانی کے لئے انہیں سراہااور ان کی تعریف کی عبدالحنان نے اپنے پریس رلیز میں ریاست کی پولیس کو آگاہ کیا کہ یہاں نوجوانوں کو لاٹھی کی طاقت سے کنٹرول کرنے کی گھنا ؤ نی سازش سے باز آئیں ۔پولیس کو چا ہیے کہ قانو ن کی طاقت کا استعمال کریں اس جمہوری اور سیکولر ملک میں غنڈوں اور کر پٹ لوگوں کو جگا نہیں، اسی طرح غندہ گردی کرنے والے پولیس آفسروں کو بھی جگہ نہیں ہے ،یہاں باباصاحب بھیم راؤ امبیڈ کر کا قانون اور دستور چلے گا ۔غلط اورصحیح کا فیصلہ کرنے کی ذمہ داری اور سزا دینے کی ذمہ داری پولیس کی نہیں ہے ،یہ ذمہ داری عدالت کی ہے ،پولیس کا کام تحقیق کرنا ،ظلم کرنے والوں کو کنٹرول کرنا اور عام عوام میں امن قائم کر نا ہے لیکن چند پولیس آفسرس امن شدہ ماحول میں خلل ڈالکے ۔

اپنی موجودگی کا احساس دلواناچاہتے ہیں۔ جب تک محلوں میں ،گلیوں میں اور شہروں میں سیاسی طور پر خود مختار لوگوں کی ٹیم اپنی بیداری کے ساتھ ساتھ عوامیتحریک کے شکل اختیار دنہیں کریگی ۔اس وقت تک ہمارے اوپر کا ظلم وزیادتی ختم نہیں ہوگی۔ملک آزاد ہوئے 70سال ہونے کے باوجود آزادی کاصحیح مزہ اور اس کی صحیح لذت مسلمانوں کو نہیں ملی ۔بنیادی سہولیات سے تک محروم یہ مسلم قوم دن بدن خوف اور بے روز گار ی کا شکار ہورہی ہے ۔ہمارے نمائندے صرف عوام کو کنفیوز کرنے اور مسائل کاحل عارضی طورپر ڈونھڈنے اور بغیر جد وجہد کے ذاتی طورپر قوم کے قا ئد بن جانے اور معصوم عوام پر اپنی لیڈر شب کی چھاپ بیٹھانے میں مشغول ہیں۔جب کہ قوم کو خوف سے با ہر نکالنے کے لئے ایک تحریک کی ضرورت ہے اور سیاسی خود مختار ی بھی ضروری ہے ۔
ہوئے مر کے ہم جو رسوا ہو ئے کیوں نہ غرق دریا
نہ کہیں جنازہ اٹھتا ،نہ کہیں مزار ہوتا
چاہتے ہیں ۔مگر سیاسی طور پرخود مختار عوام اب یہ برداشت نہیں کریگی ۔گلبرگہ شہر میں حال ہی میں سپنڈ ہوئے PSIکا ذکر کرتے ہوئے عبدالحنان سوشیل ڈیمو کریٹک پارٹی آف انڈیا کے ریاستی صدر نے کہا کہ اعلیٰ پولیس افسران کی یہ ذمہ داری ہے کہ عام عوام میں قانون پر بھروسہ قائم رکھنے کے لئے قانون کو ہاتھ میں لینے والے پولیس کے غنڈوں کو لگام لگائیں صرف عوام کاغصہ ٹھنڈا کرنے کے لئے عارضی سزا دینے کی بجائے سختی کے ساتھ عدالت کے کٹھرے میں کھڑا کریں۔عبدا لحنان نے گلبرگہ کہ تمام نوجوانوں اور ذمہ داروں سے اپیل کی کہ ذاتی طور پرمنظم ہوکر سیاسی خود مختار ی حاصل کر نے کی جدو جہد میں اپنی قربانیاں پیش کر یں تا کہ قوم کو بہ عزت بنا یا جا سکے۔

Comments
Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedinmail

Leave a Reply

Facebook